News

Rooh e sulook

AW076-frontروح سلوک

حضرت مولانا شاہ حکیم محمد اختر صاحب نور اللہ مرقدہ

تصوف کی اصطلاح میں سلوک اللہ تعالیٰ تک پہنچنے کا راستہ طے کرنے کو کہتے ہیں۔ اللہ تک پہنچنے کا مطلب یہ ہے کہ دل کا اللہ سے ایسا خاص ربط قائم ہوجائے کہ ہر وقت اللہ تعالیٰ کی عظمتوں کا خیال رہنے لگے۔ اللہ تعالیٰ کا یہ راستہ احکام شریعہ پر عمل کرکے اور گناہوں سے بچ کر ہی طے کیا جا سکتا ہے۔ اس راستے کی سب سے بڑی رکاوٹ انسان کا نفس ہے لہٰذا راہِ سلوک طے کرنے کے لیے سب سے زیادہ ضروری اپنے نفس کا تزکیہ کرانا ہے۔

شیخ العرب والعجم عارف باللہ مجدد زمانہ حضرت اقدس مولانا شاہ حکیم محمد اخترصاحب رحمۃ اللہ علیہ نے  اپنے وعظ ’’روح سلوک‘‘ میں تزکیہ نفس کی نہایت جامع تعریف اور اس کی قسمیں بیان فرمائی ہیں۔ نیز سلوک طے کرنے کے آسان طریقے اور اس راہ میں حائل رکاوٹیں دور کرنے کے لیے قرآن و حدیث سے مستنبط تدابیر بھی بیان فرمائی ہیں۔ حضرت اقدس نے سلوک طے ہوجانے پر وصول الی اللہ کے جو ثمرات و آثار بیان فرمائے ہیں ان کو اس قدر مفصل انداز میں وہی بتا سکتا ہے جو خود اس مقام و مرتبے پر فائز ہو۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Free WordPress Themes - Download High-quality Templates